مقبوضہ بلوچستان:پاکستانی فورسز ہاتھوں 2 طالب علم جبری طور پر لاپتہ

0
34

مقبوضہ بلوچستان کے علاقے نوشکی اور حب چوکی سے پاکستانی فورسز نے 2 بلوچ طالب علموں کو حراست میں لینے کے بعد جبری طور پرلاپتہ کردیا ہے۔

آمدہ اطلاعات کے مطابق رواں ماہ یکم تاریخ کو سیکورٹی فورسز و خفیہ اداروں کے اہلکاروں نے حب چوکی کے علاقہ بھوانی میں ایک گھر پر چھاپہ مارتے ہوئے طالب علم کو حراست میں لیکر اپنے ہمراہ لے گئے ہیں۔

حب چوکی سے فورسز کے ہاتھوں حراست بعد لاپتہ ہونے والے نوجوان کی شناخت یاسر ولد حمید کے نام سے ہوئی ہے۔

اسی طرح نوشکی سے فورسز اور خفیہ اداروں نے اہلکاروں نے ایک گھر پر چھاپہ مارتے ہوئے میڈیکل کے طالب علم کو حراست بعد نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔جس کی شناخت عتیق کے نام سے ہوگئی ہے۔

لاپتہ نوجوان کے والد نے پولیس تھانہ نوشکی کو اطلاع دی ہے کہ سادہ کپڑوں اور فورسز وردیوں میں ملبوس بندوق برداروں نے انکے گھر میں گھس کر اسکے بیٹے کو تشدد کا نشانہ بنایا اور اپنے ساتھ لے گئے۔لاپتہ نوجوان کے والد کے مطابق انکا بیٹامیڈیکل کا طالب علم ہے گرفتاری بعد اسکے بیٹے کو نامعلوم مقام منتقل کردیا گیا ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں